Jump to content

عبادلہ

آزاد انسائیکلوپیڈیا، وکیپیڈیا توں

عبادلہ دا لفظ اک تو‏ں زیادہ عبد اللہ دے لئی اکٹھا بولا جاندا اے جداں عبادلہ ثلاثہ یا عبادلہ اربعہ وغیرہ

مطلق عبادلہ[سودھو]

جب لفظ مطلق عبادلہ بولا جائے تاں اس تو‏ں مراد ہُندے نيں عبد اللہ بن عباس، وعبد اللہ بن عمر بن الخطاب، وعبد اللہ بن زبير، وعبد اللہ بن مسعود۔ انہاں نو‏ں ہی چار عبادلہ وی کہیا جاندا اے [۱]

چار عبادلہ[سودھو]

عبد اللہ بن عباس، وعبد اللہ بن عمرو بن العاص، وعبد اللہ بن عمر، وعبد اللہ بن الزبير۔ انہاں نو‏ں فقہ العبادلہ(فقیہ عبادلہ) وی کہیا جاندا اے
امام احمد بن حنبل تو‏ں پُچھیا گیا کہ عبادلہ کون نيں تاں فرمایا «عبد اللہ بن عباس، وعبد اللہ بن عمر، وعبد اللہ بن الزبير، وعبد اللہ بن مسعود »۔ جدو‏ں کہیا گیا عبد اللہ ابن عمرو بن العاص تاں فرمایا «لا، ليس عبد اللہ بن عمرو بن العاص من العبادلة» نئيں عبد اللہ ابن مسعود عبادلہ وچ شامل نئيں[۲]

تن عبادلہ[سودھو]

عموما جدو‏ں تن عبادلہ مراد لینا ہاں تاں انہاں دا ناں لیا جاندا اے جداں رأيت العبادلة الثلالثة يفعلون ذلك عبد اللہ بن عباس وبن عمر و عبد اللہ بن الزبير(ميں نے تن عبادلہ نو‏‏ں اس طرح کردے ہوئے دیکھیا)

روایت عبادلہ[سودھو]

رواية العبادلة (راوی عبادلہ)سے مراد عبد اللہ ابن مبارک، وعبد اللہ بن وہب، وعبد اللہ بن يزيد المقرئ جدو‏ں ایہ کسی حدیث نو‏‏ں ضعیف کدرے تاں اوہ ضعیف تے صحیح کدرے تاں صحیح ہوئے گی

جیش العبادلہ[سودھو]

بجيش العبادلة (عبادلہ دا لشکر)،اس د‏ی قیادت عبد اللہ بن ابی سرح تے اس وچ عبد اللہ بن عمر، وعبد اللہ بن عباس، وعبد اللہ بن الزبير، وعبد اللہ بن عمرو بن العاص۔ سن ایہ افریقہ بھیجیا گیا تھا[۳]

حوالے[سودھو]

  1. تدريب الراوی
  2. الحديث فی علوم القرآن والحديث مؤلف: حسن محمد ايوب،ناشر: دار السلام - الاسكندريہ
  3. لمحات عابرة من حياة العبادلۃ المؤلف: د۔ بدوی مطر